مواد فوراً دِکھائیں

مضامین کی فہرست فوراً دِکھائیں

 حصہ 5

‏”‏اپنے چرواہے اور نگہبان کے پاس لوٹ“‏ آئیں

‏”‏اپنے چرواہے اور نگہبان کے پاس لوٹ“‏ آئیں

اب تک ہم کچھ ایسی مشکلا‌ت پر بات کر چُکے ہیں جن کی وجہ سے ایک مسیحی،‏ یہوواہ خدا سے دُور جا سکتا ہے۔‏ کیا اِن میں سے کوئی بات ایسی ہے جس نے آپ کو یہوواہ سے دُور کر دیا ہے؟‏ اگر ایسا ہے تو دل چھوٹا نہ کریں۔‏ ماضی میں جب یہوواہ کے بندوں کو ایسی مشکلا‌ت کا سامنا ہوا تو اُس نے اُنہیں سنبھالا۔‏ آج بھی جب اُس کے بندے اِن مشکلا‌ت سے گزرتے ہیں تو وہ اُن کی مدد کرتا ہے۔‏ تو پھر بھلا وہ آپ کی مدد کیوں نہیں کرے گا!‏

یہوواہ خدا اپنی بانہیں پھیلا‌ئے آپ کے لوٹنے کا اِنتظار کر رہا ہے۔‏

 یہوواہ خدا اپنی بانہیں پھیلا‌ئے آپ کے لوٹنے کا اِنتظار کر رہا ہے۔‏ وہ زندگی کی فکروں کا مقابلہ کرنے اور اپنے دل سے ناراضگی کو ختم کرنے میں آپ کی مدد کرے گا۔‏ وہ آپ کے ضمیر سے بوجھ بھی اُتار دے گا تاکہ آپ کو اِطمینان اور سکون ملے۔‏ اِس طرح آپ کے دل میں پھر سے یہ شوق پیدا ہوگا کہ آپ اپنے ہم‌ایمانوں کے ساتھ مل کر یہوواہ کی خدمت کریں۔‏ اور آپ کی صورتحال پہلی صدی کے مسیحیوں جیسی ہوگی جن کے بارے میں پطرس رسول نے کہا:‏ ”‏آپ ایسی بھیڑوں کی طرح تھے جو بھٹک رہی تھیں لیکن اب آپ اپنے چرواہے اور نگہبان کے پاس لوٹ آئے ہیں۔‏“‏—‏1-‏پطرس 2:‏25‏۔‏

یہوواہ کے پاس لوٹنے سے آپ کو بہت سے فائدے ہوں گے۔‏ اِس کا ایک بڑا فائدہ تو یہ ہوگا کہ آپ یہوواہ کا دل شاد کریں گے۔‏ (‏امثال 27:‏11‏)‏ آپ جانتے ہیں کہ ہم اپنے کاموں سے یا تو یہوواہ کو خوش کر سکتے ہیں یا پھر ناراض۔‏ یہوواہ ہمیں اِس بات پر مجبور نہیں کرتا کہ ہم اُس سے محبت کریں اور اُس کی خدمت کریں۔‏ (‏اِستثنا 30:‏19،‏ 20‏)‏ بائبل کے ایک عالم نے کہا کہ ”‏اِنسان کے دل کا دروازہ باہر سے نہیں بلکہ اندر سے کھلتا ہے۔‏“‏ جب ہمارا دل یہوواہ کے لیے محبت سے بھرا ہوگا تو وہ خودبخود اُس کی عبادت کے لیے کُھلے گا۔‏ ہم وفاداری سے اُس کی خدمت کریں گے اور یوں اُسے ایک قیمتی نذرانہ دے رہے ہوں گے۔‏ اِسے پا کر یقیناً اُس کا دل خوشی سے بھر جائے گا۔‏ اور جب وہ ہماری عبادت سے خوش ہوگا تو ہمیں بھی بےپناہ خوشیاں ملیں گی۔‏—‏اعمال 20:‏35؛‏ مکا‌شفہ 4:‏11‏۔‏

اِس کے علا‌وہ جب آپ پھر سے یہوواہ کی عبادت کرنے لگیں گے تو آپ کو اُس کی طرف سے رہنمائی بھی ملنے لگے گی۔‏ (‏متی 5:‏3‏)‏ پوری دُنیا میں لاکھوں لوگ سوچتے ہیں کہ ”‏آخر زندگی کا مقصد کیا ہے؟‏“‏ وہ ایسے اہم سوالوں کے جوابوں کی تلا‌ش میں رہتے ہیں مگر اُنہیں جواب نہیں ملتے۔‏ دراصل اِنسان خدا کی رہنمائی کے بغیر نہ تو زندگی کے مقصد کو جان سکتے ہیں اور نہ ہی حقیقی خوشی حاصل کر سکتے ہیں۔‏ لیکن ہمارے لیے یہ کتنی خوشی کی بات ہے کہ ہمیں یہوواہ خدا کی رہنمائی حاصل ہے۔‏—‏زبور 63:‏1-‏5‏۔‏

یہوواہ کی شدید خواہش ہے کہ آپ اُس کے پاس لوٹ آئیں۔‏ لیکن اِس کا کیا ثبوت ہے کہ وہ واقعی ایسا چاہتا ہے؟‏ پہلی بات تو یہ ہے کہ اِس کتاب کو بڑی دُعاؤں کے بعد اور بڑے پیار سے آپ کے لیے تیار کِیا گیا۔‏ پھر کلیسیا کے کسی بزرگ یا کسی اَور بہن یا بھائی نے یہ کتاب آپ کو دی۔‏ اور پھر آپ نے اِسے پڑھا اور آپ کے دل میں یہوواہ کے پاس واپس جانے کی خواہش جاگی۔‏ اِن سب باتوں سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ یہوواہ آپ کو بھولا نہیں۔‏ دراصل وہ آپ کو آہستہ آہستہ اپنی طرف کھینچ رہا ہے۔‏—‏یوحنا 6:‏44‏۔‏

یہ بات جان کر ہمیں بہت تسلی ملتی ہے کہ یہوواہ اپنی کھوئی ہوئی بھیڑوں کو کبھی نہیں بھولتا۔‏ اِس بات سے بہن ڈونا کو بھی بہت حوصلہ ملا۔‏ اُنہوں نے بتایا:‏ ”‏مَیں آہستہ آہستہ یہوواہ سے دُور ہوتی چلی گئی۔‏ لیکن مَیں اکثر زبور 139:‏23،‏ 24 پر غور کِیا کرتی تھی۔‏ اِن آیتوں میں لکھا ہے:‏ ”‏اَے خدا!‏ تُو مجھے جانچ اور میرے دل کو پہچان۔‏ مجھے آزما اور میرے خیالوں کو جان لے اور دیکھ کہ مجھ میں کوئی بُری روِش تو نہیں اور مجھ کو ابدی راہ میں لے چل۔‏“‏ مَیں جانتی تھی کہ مَیں اِس دُنیا کا حصہ نہیں ہوں۔‏ اِس لیے مَیں اِس کے سانچے میں ڈھل نہیں سکی۔‏ مَیں یہ بھی اچھی طرح جانتی تھی کہ میرا ٹھکا‌نا صرف یہوواہ کی تنظیم میں ہی ہے۔‏ مجھے یہ احساس ہو گیا تھا کہ یہوواہ نے میرا ساتھ کبھی بھی نہیں چھوڑا۔‏ مجھے بس واپسی کا قدم اُٹھانا تھا جو آخرکار مَیں نے اُٹھا لیا۔‏ اور مجھے اِس بات کی بےحد خوشی ہے۔‏“‏

‏”‏مجھے یہ احساس ہو گیا تھا کہ یہوواہ نے میرا ساتھ کبھی بھی نہیں چھوڑا۔‏ مجھے بس واپسی کا قدم اُٹھانا تھا۔‏“‏

ہماری دلی دُعا ہے کہ آپ بھی یہوواہ کے پاس لوٹ آئیں اور پھر سے وہی خوشی پائیں جو یہوواہ آپ کو دینا چاہتا ہے۔‏ (‏نحمیاہ 8:‏10‏)‏ آپ کو یہوواہ کے پاس لوٹنے پر کبھی کوئی پچھتاوا نہیں ہوگا!‏