مواد فوراً دِکھائیں

مضامین کی فہرست فوراً دِکھائیں

 باب 13

یسوع مسیح کی طرح آزمائشوں کا مقابلہ کریں

یسوع مسیح کی طرح آزمائشوں کا مقابلہ کریں

متی 4:‏1-‏11 مرقس 1:‏12،‏ 13 لُوقا 4:‏1-‏13

  • شیطان نے یسوع مسیح کو ورغلانے کی کوشش کی

جب یسوع مسیح نے بپتسمہ لے لیا تو پاک روح اُنہیں فوراً یہودیہ کے ویرانے میں لے گئی۔‏ آپ کو یاد ہوگا کہ جیسے ہی اُنہوں نے بپتسمہ لیا،‏ ”‏آسمان کُھل گیا۔‏“‏ (‏متی 3:‏16‏)‏ اب اُنہیں وہ سب کچھ یاد آنے لگا جو اُنہوں نے آسمان پر سیکھا تھا اور کِیا تھا۔‏ لہٰذا اُن کو بہت سی باتوں پر سوچ بچار کرنی تھی۔‏

یسوع مسیح نے ویرانے میں 40 دن اور 40 راتیں گزاریں اور اِس دوران اُنہوں نے کچھ نہیں کھایا۔‏ پھر جب اُن کو سخت بھوک لگی تو شیطان نے آ کر اُن سے کہا:‏ ”‏اگر تُم خدا کے بیٹے ہو تو اِن پتھروں سے کہو کہ روٹیاں بن جائیں۔‏“‏ (‏متی 4:‏3‏)‏ مگر یسوع مسیح جانتے تھے کہ اگر وہ معجزے کرنے کی طاقت کو اپنی ضروریات پوری کرنے کے لیے اِستعمال کریں گے تو یہ غلط ہوگا۔‏ لہٰذا اُنہوں نے شیطان کی بات ماننے سے اِنکار کر دیا۔‏

مگر شیطان یسوع مسیح کو ورغلانے سے باز نہیں آیا۔‏ اُس نے یسوع مسیح سے کہا کہ وہ ہیکل کی چھت سے چھلانگ لگا دیں تاکہ فرشتے آ کر اُن کو بچا لیں۔‏ لیکن یسوع مسیح نے ایسا نہیں کِیا کیونکہ وہ شیخی نہیں مارنا چاہتے تھے۔‏ اِس لیے اُنہوں نے پاک صحیفوں کا حوالہ دے کر شیطان سے کہا کہ اِس طرح سے خدا کا اِمتحان لینا غلط ہے۔‏

پھر شیطان نے یسوع مسیح کو ایک اَور طریقے سے آزمانے کی کوشش کی۔‏ اُس نے اُنہیں ”‏دُنیا کی تمام بادشاہتیں اور اُن کی شان دِکھائی“‏ اور اُن سے کہا:‏ ”‏اگر تُم گھٹنے ٹیک کر ایک بار مجھے سجدہ کرو گے تو مَیں یہ سب کچھ تمہیں دے دوں گا۔‏“‏ اِس پر یسوع نے شیطان کو دو ٹوک جواب دیتے ہوئے کہا:‏ ”‏چلے جاؤ،‏ شیطان!‏“‏ (‏متی 4:‏8-‏10‏)‏ یسوع جانتے تھے کہ صرف یہوواہ خدا ہی عبادت کا حق‌دار ہے۔‏ اِس لیے وہ شیطان کے بہکاوے میں نہیں آئے بلکہ یہوواہ خدا کے وفادار رہے۔‏

اِس واقعے اور یسوع مسیح کے ردِعمل پر غور کرنے سے ہم کیا سیکھتے ہیں؟‏ ایک بات تو یہ کہ شیطان ایک حقیقی مخلوق ہے۔‏ وہ اِنسانوں میں موجود بُرائی کا رُجحان نہیں ہے جیسا کہ کچھ لوگوں کا خیال ہے۔‏ دوسری بات یہ کہ دُنیا کی حکومتیں شیطان کی ملکیت ہیں اور وہ اُن کے ساتھ جو چاہے کر سکتا ہے۔‏ ذرا سوچیں کہ اگر ایسا نہ ہوتا تو شیطان یسوع مسیح کو اِن کی پیشکش کیسے کر سکتا تھا؟‏

شیطان نے یسوع مسیح سے یہ بھی کہا کہ اگر وہ صرف ایک بار اُسے سجدہ کریں گے تو وہ بدلے میں اُن کو ”‏دُنیا کی تمام بادشاہتیں“‏ دے دے گا۔‏ شاید شیطان ہمیں بھی اِس طرح سے ورغلانے کی کوشش کرے۔‏ ہو سکتا ہے کہ وہ ہمیں اِس دُنیا میں دولت،‏ شہرت یا اِختیار حاصل کرنے کا لالچ دے۔‏ لیکن خواہ آزمائش کیسی بھی ہو،‏ دانش‌مندی کی راہ یہی ہوگی کہ ہم یسوع مسیح کی مثال پر عمل کرتے ہوئے خدا کے وفادار رہیں۔‏ اُس موقعے پر شیطان یسوع مسیح کو ورغلانے میں ناکام رہا لیکن اُس نے یسوع کا پیچھا نہیں چھوڑا بلکہ ”‏کسی اَور موقعے کا اِنتظار کرنے لگا۔‏“‏ (‏لُوقا 4:‏13‏)‏ شیطان ہمارا بھی پیچھا نہیں چھوڑتا اِس لیے ہمیں ہر وقت چوکس رہنا چاہیے۔‏