مواد فوراً دِکھائیں

مضامین کی فہرست فوراً دِکھائیں

 باب نمبر ۳۶

کن مُردوں کو زندہ کِیا جائے گا اور وہ کہاں رہیں گے؟‏

کن مُردوں کو زندہ کِیا جائے گا اور وہ کہاں رہیں گے؟‏

کیا آپ کو یاد ہے کہ ہم نے پچھلے دو باب میں کتنے لوگوں کے بارے میں پڑھا تھا جن کو زندہ کِیا گیا؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ پانچ لوگوں کے بارے میں۔‏ اِن میں سے کتنے بچے تھے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ تین۔‏ اور ایک کے بارے میں کہا گیا کہ وہ جوان تھا۔‏ اِس سے ہمیں کیا پتہ چلتا ہے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏

اِس سے ہمیں پتہ چلتا ہے کہ یہوواہ خدا کو بچوں اور نوجوانوں سے بڑا پیار ہے۔‏ لیکن کیا خدا صرف بچوں اور نوجوانوں کو زندہ کرے گا؟‏ نہیں،‏ وہ اَور بھی لوگوں کو زندہ کرے گا۔‏ کیا خدا صرف اچھے لوگوں کو زندہ کرے گا؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ آپ نے دیکھا ہوگا کہ بہت سے لوگ اِس لئے بُرے کام کرتے ہیں کیونکہ اُن کو یہوواہ خدا اور یسوع مسیح کے بارے میں سچی باتیں نہیں سکھائی گئی ہیں۔‏ جب ایسے لوگ مر جاتے ہیں تو کیا یہوواہ خدا اُن کو زندہ کرے گا؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏

بائبل میں لکھا ہے:‏ ”‏راست‌بازوں اور ناراستوں دونوں کی قیامت ہوگی۔‏“‏ (‏اعمال ۲۴:‏۱۵‏)‏ اِس کا مطلب ہے کہ خدا صرف اچھے لوگوں کو نہیں بلکہ بُرے لوگوں کو بھی زندہ کرے گا۔‏ لیکن آپ کے خیال میں خدا بُرے لوگوں کو کیوں زندہ کرے گا؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ اِس لئے کہ اُن کو یہوواہ خدا اور اُس کی مرضی کے بارے  میں سیکھنے کا موقع نہیں ملا۔‏ اگر وہ خدا کے بارے میں سیکھتے تو شاید وہ بُرے کام نہیں کرتے۔‏

خدا اُن لوگوں کو کیوں زندہ کرے گا جنہوں نے بُرے کام کئے تھے؟‏

کیا آپ کو پتہ ہے کہ یہوواہ خدا مُردوں کو کب زندہ کرے گا؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ یاد ہے کہ جب لعزر مر گئے تو یسوع مسیح نے اُن کی بہن مرتھا سے کہا کہ ”‏تمہارا بھائی جی اُٹھے گا۔‏“‏ اِس پر مرتھا نے کہا:‏ ”‏مَیں جانتی ہوں کہ وہ آخری دن پر قیامت میں جی اُٹھے گا۔‏“‏ (‏یوحنا ۱۱:‏۲۳،‏ ۲۴‏)‏ مرتھا کیسے جانتی تھیں کہ لعزر آخری دن پر زندہ ہوں گے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏

یسوع مسیح اِس ڈاکو کو کہاں زندہ کریں گے؟‏

مرتھا جانتی تھیں کہ یسوع مسیح نے کہا تھا:‏ ”‏وہ وقت آنے والا ہے جب مُردے قبروں سے باہر نکل آئیں گے۔‏“‏ (‏یوحنا ۵:‏۲۸،‏ ۲۹‏)‏ اِس سے مرتھا سمجھ گئی تھیں کہ خدا مُردوں کو آخری دن پر زندہ کرے گا۔‏ یہ دن ۲۴ گھنٹے کا نہیں ہوگا بلکہ یہ دن ایک ہزار سال لمبا ہوگا۔‏ اُس عرصے کے دوران مُردے زندہ ہوں گے۔‏ بائبل میں لکھا ہے کہ خدا آخری دن پر ”‏زمین پر رہنے والے لوگوں کی عدالت کرے گا۔‏“‏—‏اعمال ۱۷:‏۳۱؛‏ ۲-‏پطرس ۳:‏۸‏۔‏

اِن ہزار سال کے دوران خدا لاکھوں مُردوں کو زندہ کرے گا۔‏ یہ کتنا اچھا وقت ہوگا!‏ اِن لوگوں کو کہاں زندہ کِیا جائے گا؟‏ یسوع مسیح نے کہا کہ وہ فردوس میں رہیں گے۔‏ آئیں،‏ دیکھیں کہ فردوس کہاں ہوگا اور اُس میں حالات کیسے ہوں گے۔‏

جب یسوع مسیح سُولی پر لٹکے ہوئے تھے تو اُنہوں نے ایک ڈاکو کو فردوس کے بارے میں بتایا۔‏ وہ ڈاکو بھی ایک سُولی پر لٹکا ہوا تھا۔‏ لوگ یسوع مسیح کے ساتھ بہت بُرا سلوک کر رہے تھے۔‏ ڈاکو نے دیکھا کہ یسوع مسیح یہ سب کچھ بڑے صبر سے برداشت کر رہے ہیں۔‏ اِس لئے وہ یسوع مسیح پر ایمان لے آیا۔‏  اِس ڈاکو نے یسوع مسیح سے کہا:‏ ”‏جب آپ اپنی بادشاہت میں آئیں گے تو مجھے یاد کریں۔‏“‏ یسوع مسیح نے اُس کو جواب دیا:‏ ”‏تُم میرے ساتھ فردوس میں ہوگے۔‏“‏—‏لوقا ۲۳:‏۴۲،‏ ۴۳‏۔‏

آنے والا فردوس کس فردوس کی طرح ہوگا؟‏

آپ کے خیال میں یہ فردوس کہاں ہوگا؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ ذرا سوچیں کہ شروع میں فردوس کہاں تھا؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ یاد ہے کہ جب خدا نے آدم اور حوا کو بنایا تھا تو اُس نے اُنہیں زمین پر فردوس میں بسایا تھا۔‏ یہ ایک خوب‌صورت باغ تھا جس کا نام باغِ‌عدن تھا۔‏ فردوس میں بہت سارے جانور تھے لیکن وہ کسی کو نقصان نہیں پہنچاتے تھے۔‏ فردوس میں بہت سے درخت بھی تھے جن پر مزےمزے کے پھل لگے تھے۔‏ اِس میں ایک بڑا دریا بھی تھا۔‏ یہ باغ بہت ہی شان‌دار تھا!‏—‏پیدایش ۲:‏۸-‏۱۰‏۔‏

اِس سے ہمیں پتہ چلتا ہے کہ جب یسوع مسیح نے ڈاکو سے کہا کہ ”‏تُم فردوس میں ہوگے“‏ تو وہ زمین کی بات کر رہے تھے۔‏ اِس کا مطلب ہے کہ پوری زمین فردوس بن جائے گی۔‏ کیا یسوع مسیح اُس ڈاکو کے ساتھ زمین پر ہوں گے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ یسوع مسیح زمین پر فردوس میں نہیں ہوں گے۔‏ کیا آپ جانتے ہیں کہ وہ زمین پر کیوں نہیں ہوں گے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏

اِس لئے کہ یسوع مسیح آسمان پر ہوں گے اور وہاں سے زمین پر رہنے والے لوگوں پر حکومت کریں گے۔‏ تو پھر یسوع مسیح نے کیوں کہا تھا کہ وہ ڈاکو کے ساتھ ہوں گے؟‏ وہ اِس لحاظ سے ڈاکو کے ساتھ ہوں گے کہ وہ اُس کو زندہ کریں گے اور اُس کی ضروریات پوری کریں گے۔‏ لیکن آپ کے خیال میں یسوع مسیح ایک ڈاکو کو فردوس میں کیوں رہنے دیں گے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ آئیں،‏ دیکھتے ہیں۔‏

 کیا ڈاکو،‏ یسوع مسیح سے بات کرنے سے پہلے خدا کی مرضی کے بارے میں جانتا تھا؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ وہ خدا کی مرضی کے بارے میں نہیں جانتا تھا۔‏ اِس لئے اُس نے بُرے کام کئے تھے۔‏ جب اُسے فردوس میں زندہ کِیا جائے گا تو وہ خدا کی مرضی کے بارے میں سیکھے گا۔‏ اِس کے بعد اگر وہ خدا کی مرضی پر چلے گا تو یہ ظاہر ہو جائے گا کہ وہ خدا سے پیار کرتا ہے۔‏

جن مُردوں کو زندہ کِیا جائے گا،‏ کیا وہ سب زمین پر رہیں گے؟‏ آپ کا کیا خیال ہے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ وہ سب زمین پر نہیں رہیں گے۔‏ کیا آپ کو پتہ ہے کہ کیوں؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ کیونکہ کچھ مُردوں کو آسمان پر رہنے کے لئے زندہ کِیا جائے گا۔‏ وہاں وہ بادشاہ ہوں گے اور یسوع مسیح کے ساتھ اُن لوگوں پر حکومت کریں گے جو زمین پر رہیں گے۔‏ ہم یہ کیسے جانتے ہیں؟‏

یسوع مسیح نے مرنے سے پہلے اپنے رسولوں سے کہا:‏ ”‏میرے باپ کے گھر میں بہت سے مکان ہیں۔‏ مَیں تمہارے لئے جگہ تیار کرنے کے لئے وہاں جا رہا ہوں۔‏“‏ پھر یسوع مسیح نے اُن سے وعدہ کِیا:‏ ”‏مَیں واپس آکر تمہیں اپنے ساتھ لے جاؤں گا تاکہ جہاں مَیں ہوں،‏ تُم بھی ہو۔‏“‏—‏یوحنا ۱۴:‏۲،‏ ۳‏۔‏

 ذرا سوچیں کہ جب یسوع مسیح کو زندہ کِیا گیا تو وہ کہاں چلے گئے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ وہ اپنے باپ کے پاس آسمان پر چلے گئے۔‏ (‏یوحنا ۱۷:‏۴،‏ ۵‏)‏ اُنہوں نے اپنے رسولوں سے وعدہ کِیا کہ وہ اُن کو زندہ کرکے اپنے ساتھ آسمان پر لے جائیں گے۔‏ یسوع مسیح کے رسولوں کے علاوہ اُن کے کچھ اَور شاگرد بھی آسمان پر جائیں گے۔‏ یہ سب ”‏پہلی قیامت میں شریک ہوں گے۔‏“‏ کیا آپ کو پتہ ہے کہ یہ لوگ آسمان پر کیا کریں گے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ بائبل میں بتایا گیا ہے کہ وہ یسوع مسیح کے ساتھ ”‏ہزار سال تک بادشاہت کریں گے۔‏“‏—‏مکاشفہ ۵:‏۱۰؛‏ ۲۰:‏۶؛‏ ۲-‏تیمتھیس ۲:‏۱۲‏۔‏

کیا آپ جانتے ہیں کہ کتنے لوگ پہلی قیامت میں شریک ہوں گے اور یسوع مسیح کے ساتھ حکمرانی کریں گے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ یسوع مسیح نے اپنے شاگردوں سے کہا:‏ ”‏اَے چھوٹے گلّے!‏ ڈرو مت!‏ کیونکہ تمہارے باپ کی خوشی اِسی میں ہے کہ وہ تمہیں بادشاہت دے۔‏“‏ (‏لوقا ۱۲:‏۳۲‏)‏ جو لوگ یسوع مسیح کے ساتھ بادشاہت کریں گے،‏ وہ ایک چھوٹا گلّہ ہیں۔‏ اِس چھوٹے گلّے میں کتنے لوگ ہوں گے؟‏ بائبل میں بتایا گیا ہے کہ اِس میں ”‏ایک لاکھ ۴۴ ہزار“‏ لوگ ہوں گے۔‏—‏مکاشفہ ۱۴:‏۱،‏ ۳‏۔‏

مُردوں کو کہاں‌کہاں زندہ کِیا جائے گا اور وہ وہاں کیا کریں گے؟‏

آپ کے خیال میں کتنے لوگ زمین پر فردوس میں رہیں گے؟‏ .‏.‏.‏.‏.‏.‏ بائبل میں یہ نہیں بتایا گیا ہے۔‏ لیکن آپ کو یاد ہوگا کہ خدا چاہتا تھا کہ آدم اور حوا کے بہت سے بچے ہوں اور زمین اچھے لوگوں سے بھر جائے۔‏ خدا کی یہ مرضی پوری نہیں ہوئی کیونکہ آدم اور حوا نے خدا کا کہنا نہیں مانا۔‏ تو پھر کیا ایک ایسا وقت آئے گا جب پوری زمین پر صرف اچھے لوگ رہیں گے؟‏ جی،‏ کیونکہ خدا جو کچھ کہتا ہے،‏ اُسے پورا بھی کرتا ہے۔‏—‏پیدایش ۱:‏۲۸؛‏ یسعیاہ ۴۵:‏۱۸؛‏ ۵۵:‏۱۱‏۔‏

فردوس میں زندگی بڑی اچھی ہوگی۔‏ پوری زمین ایک خوب‌صورت پارک بن جائے گی۔‏ اِس میں طرح‌طرح کے پرندے اور جانور ہوں گے۔‏ اِس میں خوب‌صورت درخت اور رنگ‌برنگے پھول بھی ہوں گے۔‏ کوئی بیمار نہیں ہوگا اور لوگ ہمیشہ تک زندہ رہ سکیں گے۔‏ سب لوگ مل‌جُل کر رہیں گے اور ایک دوسرے کے دوست ہوں گے۔‏ اگر ہم بھی ہمیشہ کے لئے اِس فردوس میں رہنا چاہتے ہیں تو ہمیں ابھی سے تیاری کرنی پڑے گی۔‏

زمین کے لئے خدا کی مرضی کیا ہے؟‏ اِس سلسلے میں اِن آیتوں کو پڑھیں:‏ امثال ۲:‏۲۱،‏ ۲۲؛‏ واعظ ۱:‏۴؛‏ یسعیاہ ۲:‏۴؛‏ یسعیاہ ۱۱:‏۶-‏۹؛‏ یسعیاہ ۳۵:‏۵،‏ ۶‏؛‏ اور یسعیاہ ۶۵:‏۲۱-‏۲۴‏۔‏