مواد فوراً دِکھائیں

مضامین کی فہرست فوراً دِکھائیں

 باب 12

حقیقی ایمان ظاہر کریں

حقیقی ایمان ظاہر کریں

خدا نے اپنے بندوں کو اِس بات سے آگاہ کِیا ہے کہ اُنہیں آزمائشوں کا سامنا ہوگا۔‏ اُس کے کلام میں لکھا ہے:‏ ”‏تُم ہوشیار اور بیدار رہو۔‏ تمہارا مخالف ابلیس گرجنے والے شیرببر کی طرح ڈھونڈتا پھرتا ہے کہ کس کو پھاڑ کھائے۔‏“‏ (‏1-‏پطرس 5:‏8‏)‏ شیطان آپ کے ایمان کو کمزور کرنے کی کوشش کیسے کرے گا؟‏

کیا آپ کو بھی اِس قسم کے دباؤ کا سامنا ہوا ہے؟‏

شیطان شاید دوسرے لوگوں کے ذریعے آپ پر دباؤ ڈالے تاکہ آپ پاک صحیفوں کا مطالعہ کرنا چھوڑ دیں۔‏ اِس سلسلے میں یسوع مسیح نے کہا تھا:‏ ”‏آدمی کے دُشمن اُس کے گھر ہی کے لوگ ہوں گے۔‏“‏ (‏متی 10:‏36‏)‏ شاید آپ کے گھر والے اور دوست اِس لئے آپ پر دباؤ ڈالیں کیونکہ وہ اِس بات سے واقف نہیں ہیں کہ پاک صحیفوں میں پائی جانے والی تعلیم آپ کے لئے بہت فائدہ‌مند ہے۔‏ شاید وہ اِس بات سے ڈرتے ہیں کہ جب دوسرے لوگوں کو پتہ چلے گا کہ آپ پاک صحیفوں کا مطالعہ کر رہے ہیں تو وہ کیا کہیں گے۔‏ لیکن پاک صحیفوں میں لکھا ہے:‏ ”‏انسان کا ڈر پھندا ہے لیکن جو کوئی [‏یہوواہ]‏ پر توکل کرتا ہے محفوظ رہے گا۔‏“‏ (‏امثال 29:‏25‏)‏ اگر آپ لوگوں کو خوش کرنے کے لئے پاک صحیفوں کا مطالعہ کرنا چھوڑ دیں گے تو کیا خدا اِس بات سے خوش ہوگا؟‏ بالکل نہیں۔‏ یاد رکھیں کہ جب ہم حقیقی ایمان ظاہر کرتے ہیں تو خدا ہماری مدد کرتا ہے۔‏ ”‏ہم ہٹنے والے نہیں کہ ہلاک ہوں بلکہ ایمان رکھنے والے ہیں کہ جان بچائیں۔‏“‏—‏عبرانیوں 10:‏39‏۔‏

تیسرے باب میں ایک ایسے شخص کا ذکر کِیا گیا ہے جو پاک صحیفوں کا مطالعہ کر رہے تھے۔‏ اِس کی وجہ سے اُن کی بیوی اُن کا مذاق اُڑایا کرتی تھیں۔‏ لیکن تھوڑے عرصے بعد وہ بھی اپنے شوہر کے ساتھ بیٹھ کر پاک صحیفوں کا مطالعہ کرنے لگیں۔‏ اِسی طرح جب آپ بھی پاک صحیفوں کا مطالعہ جاری رکھتے ہیں تو اِس کا آپ کے دوستوں اور گھر والوں پر اچھا اثر پڑ سکتا ہے۔‏ شاید آپ کے گھر کا کوئی فرد آپ کے ’‏پاکیزہ چال‌چلن اور خوف کو دیکھ کر بغیر کلام کے خدا کی طرف کھنچ جائے۔‏‘‏—‏1-‏پطرس 3:‏1،‏ 2‏۔‏

شیطان لوگوں میں اِس سوچ کو فروغ دیتا ہے کہ وہ اپنی مصروفیات کی وجہ سے پاک صحیفوں کا مطالعہ کرنے کے لئے وقت نہیں نکال سکتے۔‏ وہ چاہتا ہے کہ آپ اپنی ضروریات پوری کرنے کے لئے پیسے کمانے میں اِتنے مگن ہو جائیں کہ جو باتیں آپ پاک صحیفوں سے سیکھ رہے ہیں وہ ’‏دب جائیں‘‏ اور آپ کا ایمان ’‏بےپھل رہ جائے‘‏۔‏ (‏مرقس 4:‏19‏)‏ لیکن خدا کے کلام سے علم حاصل کرنے کے لئے وقت نکالنا بہت اہم ہے۔‏ پاک صحیفوں میں لکھا ہے:‏ ”‏ہمیشہ کی زندگی یہ ہے کہ وہ تجھ  خدایِ‌واحد اور برحق کو اور یسوؔع مسیح کو جِسے تُو نے بھیجا ہے جانیں۔‏“‏ (‏یوحنا 17:‏3‏)‏ آپ صرف اُس صورت میں فردوس میں ہمیشہ کی زندگی حاصل کر پائیں گے اگر آپ خدا اور یسوع مسیح کے بارے میں علم حاصل کرنا جاری رکھیں گے۔‏

خدا سے مدد کے لئے دُعا مانگیں۔‏

موسیٰ نبی نے مصر کے شاہی گھرانے میں پرورش پائی تھی۔‏ اگر وہ چاہتے تو وہ دولت،‏ شہرت اور اختیار حاصل کر سکتے تھے۔‏ لیکن اُنہوں نے ”‏گُناہ کا چند روزہ لطف اُٹھانے کی نسبت خدا کی اُمت کے ساتھ بدسلوکی برداشت کرنا زیادہ پسند کِیا۔‏“‏ اِس کی وجہ یہ تھی کہ ’‏وہ اَن‌دیکھے کو گویا دیکھ کر ثابت‌قدم رہے۔‏‘‏ (‏عبرانیوں 11:‏24،‏ 25،‏ 27‏)‏ موسیٰ نبی خدا پر مضبوط ایمان رکھتے تھے۔‏ اُنہوں نے اپنی خواہشات پوری کرنے کی بجائے خدا کی مرضی پر چلنے کو زیادہ اہم خیال کِیا۔‏ اِس کے نتیجے میں خدا نے اُنہیں برکتوں سے نوازا۔‏ اگر آپ بھی خدا کی مرضی پر چلیں گے تو وہ آپ کو بھی برکتیں عطا کرے گا۔‏

بِلاشُبہ شیطان مختلف طریقوں سے آپ کو گمراہ کرنے کی کوشش کرے گا۔‏ لیکن آپ اُس کا شکار بننے سے بچ سکتے ہیں۔‏ پاک صحیفوں میں یہ ہدایت دی گئی ہے:‏ ”‏خدا کے تابع ہو جاؤ اور ابلیس کا مقابلہ کرو تو وہ تُم سے بھاگ جائے گا۔‏“‏ (‏یعقوب 4:‏7‏)‏ لیکن آپ ابلیس کا مقابلہ کیسے کر سکتے ہیں؟‏

پاک صحیفوں کا مطالعہ کرتے رہیں۔‏ خدا کے کلام کو ہر روز پڑھیں۔‏ اِس کا مطالعہ کرنے کے لئے وقت نکالیں۔‏ اِس میں پائی جانے والی ہدایات پر عمل کریں۔‏ ایسا کرنے سے آپ ’‏خدا کے وہ سب ہتھیار باندھنے‘‏ کے قابل ہوں گے جن کے ذریعے آپ شیطان کا مقابلہ کر سکیں گے۔‏—‏افسیوں 6:‏13‏۔‏

حقیقی ایمان رکھنے والوں سے رفاقت رکھیں۔‏ ایسے لوگوں کی تلاش کریں جو پاک صحیفوں کو پڑھتے،‏ اِن کا مطالعہ کرتے اور اِن پر عمل کرتے ہیں۔‏ ایسے لوگ ’‏محبت اور نیک کاموں کی ترغیب دینے کے لئے ایک دوسرے کا لحاظ رکھتے ہیں۔‏‘‏ وہ آپ کی مدد کریں گے تاکہ آپ بھی اپنے ایمان کو مضبوط بنا سکیں۔‏—‏عبرانیوں 10:‏24،‏ 25‏۔‏

اُن لوگوں سے رفاقت رکھیں جو حقیقی ایمان رکھتے ہیں۔‏

خدا کی قربت حاصل کریں۔‏ خدا سے دُعا کریں کہ وہ آپ کی مدد کرے۔‏ اُس پر پورا بھروسہ کریں۔‏ یاد رکھیں کہ خدا آپ کی مدد کرنا چاہتا ہے۔‏ پاک صحیفوں میں لکھا ہے:‏ ”‏اپنی ساری فکر [‏خدا]‏ پر ڈال دو کیونکہ اُس کو تمہاری فکر ہے۔‏“‏ (‏1-‏پطرس 5:‏6،‏ 7‏)‏ ”‏خدا سچا ہے۔‏ وہ تُم کو تمہاری طاقت سے زیادہ آزمایش میں نہ پڑنے دے گا بلکہ آزمایش کے ساتھ نکلنے کی راہ بھی پیدا کر دے گا تاکہ تُم برداشت کر سکو۔‏“‏—‏1-‏کرنتھیوں 10:‏13‏۔‏

شیطان کا دعویٰ ہے کہ کوئی بھی انسان آزمائش کا سامنا کرتے وقت خدا کا وفادار نہیں رہے گا۔‏ لیکن آپ شیطان کے اِس دعوے کو جھوٹا ثابت کر سکتے ہیں۔‏ خدا ہم سے کہتا ہے:‏ ”‏دانا بن اور میرے دل کو شاد کر تاکہ مَیں اپنے ملامت کرنے والے [‏یعنی شیطان]‏ کو جواب دے سکوں۔‏“‏ (‏امثال 27:‏11‏)‏ لہٰذا حقیقی ایمان ظاہر کرتے رہیں۔‏