مواد فوراً دِکھائیں

مضامین کی فہرست فوراً دِکھائیں

 سرِورق کا موضوع:‏ آپ خدا کے دوست بن سکتے ہیں

کیا آپ خدا کے قریب محسوس کرتے ہیں؟‏

کیا آپ خدا کے قریب محسوس کرتے ہیں؟‏

‏”‏خدا کی قربت میں رہنے سے مجھے تحفظ اور خوشی کا احساس ہوتا ہے۔‏ مجھے لگتا ہے جیسے خدا کو ہر پَل میرا خیال ہے۔‏“‏—‏گھانا میں رہنے والے کرسٹوفر۔‏

‏”‏خدا کو پتہ ہے کہ ہم کب کب اُداس ہوتے ہیں۔‏ ہمیں اُداس دیکھ کر وہ ہمیں اِتنا زیادہ پیار اور توجہ دیتا ہے کہ ہم سوچ بھی نہیں سکتے۔‏“‏—‏امریکہ کی ریاست الاسکا میں رہنے والی 13 سالہ حنّہ۔‏

‏”‏مجھے یہ سوچ کر بہت سکون اور خوشی ملتی ہے کہ میری خدا کے ساتھ دوستی ہے۔‏“‏—‏جمیکا میں رہنے والی 40 سالہ جینا۔‏

صرف کرسٹوفر،‏ حنّہ اور جینا ہی یہ محسوس نہیں کرتے ہیں کہ وہ خدا کے دوست  ہیں۔‏  دُنیا  میں بہت سے ایسے لوگ ہیں جنہیں پورا یقین ہے کہ خدا اُنہیں اپنا دوست خیال کرتا ہے۔‏ کیا آپ کو بھی لگتا ہے کہ آپ خدا کے دوست ہیں؟‏ کیا آپ خدا کے ساتھ دوستی کرنا چاہتے ہیں یا اُس کے ساتھ اپنی دوستی اَور مضبوط کرنا چاہتے ہیں؟‏ شاید آپ سوچیں کہ کیا واقعی ایک ادنیٰ اِنسان کائنات کے خالق کے ساتھ دوستی کر سکتا ہے؟‏ اور اگر ایسا ہے تو وہ یہ کیسے کر سکتا ہے؟‏

خدا کے ساتھ دوستی ممکن ہے

خدا کے کلام سے پتہ چلتا ہے کہ خدا کی قربت حاصل کرنا یا اُس کا دوست بننا ممکن ہے۔‏ غور کریں کہ پاک کلام میں خدا نے ابرہام نبی کا ذکر اپنے دوست کے طور پر کِیا۔‏ (‏یسعیاہ 41:‏8‏)‏ پاک کلام میں یہ بھی لکھا ہے کہ ”‏خدا کے نزدیک جاؤ تو وہ تمہارے نزدیک آئے گا۔‏“‏ (‏یعقوب 4:‏8‏)‏ اِس سے صاف پتہ چلتا ہے کہ اِنسان خدا کی قربت حاصل کر سکتے اور اُس کے دوست بن سکتے ہیں۔‏ لیکن چونکہ ہم خدا کو نہیں دیکھ سکتے تو پھر ہم اُس کے دوست کیسے بن سکتے ہیں؟‏

اِس سوال کا جواب جاننے کے لیے غور کریں کہ دو لوگوں میں دوستی کیسے ہوتی ہے۔‏ سب سے پہلے وہ ایک دوسرے کے نام سے واقف ہوتے ہیں۔‏ پھر جب وہ آپس میں بات کرتے ہیں اور ایک دوسرے کو اپنے احساسات اور خیالات بتاتے ہیں تو اُن میں دوستی بڑھتی ہے۔‏ اور جب وہ ایک دوسرے کے لیے کوئی کام کرتے ہیں تو اُن کی دوستی اَور مضبوط ہو جاتی ہے۔‏ خدا کے ساتھ دوستی کرنے کے لیے بھی ہمیں ایسے ہی اِقدام اُٹھانے ہوں گے۔‏ آئیں،‏ دیکھتے ہیں کہ ہم یہ کیسے کر سکتے ہیں۔‏