مواد فوراً دِکھائیں

مضامین کی فہرست فوراً دِکھائیں

قارئین کے سوال

قارئین کے سوال

ماجوج کا جوج کون ہے جس کا ذکر حزقی‌ایل کی کتاب میں کِیا گیا ہے؟‏

کئی سالوں سے ہماری کتابوں اور رسالوں میں بتایا جا رہا ہے کہ ماجوج کا جوج وہ نام ہے جو شیطان اِبلیس کو آسمان سے نکالے جانے کے بعد دیا گیا ہے۔‏ اِس بات کی بنیاد یہ تھی کہ مکاشفہ کی کتاب کے مطابق شیطان اُس حملے کا پیشوا ہوگا جو پوری دُنیا میں خدا کے بندوں پر کِیا جائے گا۔‏ (‏مکا 12:‏1-‏17‏)‏ اِس لیے خیال یہ تھا کہ جوج دراصل شیطان کا ہی دوسرا نام ہے۔‏

لیکن اِس وضاحت کے بارے میں کچھ سوال اُٹھتے ہیں۔‏ کیوں؟‏ ذرا اِس بات پر غور کریں:‏ جوج کی شکست کا ذکر کرتے ہوئے یہوواہ خدا نے جوج کے متعلق کہا:‏ ”‏مَیں تجھے ہر قسم کے شکاری پرندوں اور میدان کے درندوں کو دوں گا کہ [‏تجھے]‏ کھا جائیں۔‏“‏ (‏حز 39:‏4‏)‏ یہوواہ نے یہ بھی کہا:‏ ”‏اُسی دن یوں ہوگا کہ مَیں وہاں اِؔسرائیل میں جوؔج کو ایک گورستان دوں گا .‏ .‏ .‏ وہاں جوؔج کو اور اُس کی تمام جمعیت [‏یعنی فوج]‏ کو دفن کریں گے۔‏“‏ (‏حز 39:‏11‏)‏ لیکن ایک روحانی مخلوق کو ’‏شکاری پرندے اور میدان کے درندے‘‏ بھلا کیسے کھا سکتے ہیں؟‏ شیطان کو زمین پر دفن کیسے کِیا جا سکتا ہے؟‏ بائبل میں بتایا گیا ہے کہ شیطان کو 1000 برس کے لیے اتھاہ گڑھے میں بند کِیا جائے گا،‏ اُسے کھایا یا دفن نہیں کِیا جائے گا۔‏—‏مکا 20:‏1،‏ 2‏۔‏

بائبل میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ 1000 سال کے بعد شیطان کو اتھاہ گڑھے سے نکالا جائے گا اور وہ ”‏اُن قوموں کو جو زمین کی چاروں طرف ہوں گی یعنی جوؔج‌وماجوؔج کو گمراہ کر کے لڑائی کے لئے جمع کرنے کو نکلے گا۔‏“‏ (‏مکا 20:‏8‏)‏ لیکن اگر شیطان خود ہی جوج ہے تو پھر وہ جوج کو گمراہ کیسے کرے گا؟‏ اِس سے ظاہر ہوتا ہے کہ حزقی‌ایل کی کتاب میں اور مکاشفہ کی کتاب میں جوج،‏ شیطان کی طرف اِشارہ نہیں کرتا۔‏

تو پھر ماجوج کا جوج کون ہے؟‏ اِس سوال کا جواب پانے کے لیے ہمیں پاک کلام میں یہ دیکھنا ہوگا کہ خدا کے بندوں پر حملہ اصل میں کون کرے گا۔‏ بائبل میں صرف ’‏ماجوج کے جوج‘‏ کے حملے کا ہی ذکر نہیں کِیا گیا بلکہ اِس میں ”‏شاہِ‌شمال“‏ کے حملے اور ”‏زمین کے بادشاہوں“‏ کے حملے کا بھی ذکر کِیا گیا ہے۔‏ (‏حز 38:‏2،‏ 10-‏13؛‏ دان 11:‏40،‏ 44،‏ 45؛‏ مکا 17:‏14؛‏ 19:‏19‏)‏ کیا یہ سب حملے الگ الگ ہوں گے؟‏ غالباً نہیں۔‏ لگتا ہے کہ بائبل میں ایک ہی حملے کو مختلف نام دیے گئے ہیں۔‏ ہم ایسا کیوں کہہ سکتے ہیں؟‏ کیونکہ بائبل میں بتایا گیا ہے کہ خدا کے بندوں پر آخری حملہ سب قومیں مل کر کریں گی۔‏ جب ایسا ہوگا تو یہوواہ خدا ہرمجِدّون کی جنگ شروع کرے گا۔‏—‏مکا 16:‏14،‏ 16‏۔‏

 جب ہم خدا کے بندوں پر آخری حملے کے بارے میں تمام آیتوں کا جائزہ لیتے ہیں تو یہ ظاہر ہوتا ہے کہ ماجوج کا جوج شیطان کی طرف اِشارہ نہیں کرتا۔‏ یہ تمام قوموں کی طرف اِشارہ کرتا ہے جو متحد ہو کر خدا کے بندوں پر حملہ کریں گی۔‏ کیا شاہِ‌شمال اِن قوموں کی پیشوائی کرے گا؟‏ ہم اِس کے متعلق یقین سے کچھ نہیں کہہ سکتے۔‏ البتہ جوج کے متعلق یہوواہ خدا نے جو کچھ کہا اُس سے اِشارہ ملتا ہے کہ شاہِ‌شمال خدا کے بندوں پر آخری حملے میں پیشوائی کرے گا۔‏ یہوواہ نے جوج کے بارے میں کہا:‏ ”‏تُو اپنی جگہ سے شمال کی دُور اطراف سے آئے گا تُو اور بہت سے لوگ تیرے ساتھ جو سب کے سب گھوڑوں پر سوار ہوں گے۔‏ ایک بڑی فوج اور بھاری لشکر۔‏“‏—‏حز 38:‏6،‏ 15‏۔‏

دانی‌ایل نبی جو حزقی‌ایل نبی کے زمانے میں ہی رہتے تھے،‏ اُنہوں نے شاہِ‌شمال کے بارے میں کہا:‏ ”‏مشرقی اور شمالی اطراف سے افواہیں اُسے پریشان کریں گی اور وہ بڑے غضب سے نکلے گا کہ بہتوں کو نیست‌ونابود کرے۔‏ اور وہ شان‌دار مُقدس پہاڑ اور سمندر کے درمیان شاہی خیمے لگائے گا لیکن اُس کا خاتمہ ہو جائے گا اور کوئی اُس کا مددگار نہ ہوگا۔‏“‏ (‏دان 11:‏44،‏ 45‏)‏ دانی‌ایل کے یہ الفاظ اُن الفاظ سے ملتے جلتے ہیں جو حزقی‌ایل 38:‏8-‏12،‏ 16 میں جوج کے بارے میں لکھے ہیں۔‏

خدا کے بندوں پر اِس آخری حملے کی وجہ سے کیا ہوگا؟‏ دانی‌ایل نبی نے بتایا:‏ ”‏اُس وقت میکاؔئیل مقرب فرشتہ [‏یعنی یسوع مسیح]‏ جو تیری قوم کے فرزندوں کی حمایت کے لئے [‏1914ء سے]‏ کھڑا ہے اُٹھے گا اور وہ ایسی تکلیف [‏یعنی بڑی مصیبت]‏ کا وقت ہوگا کہ ابتدایِ‌اقوام سے اُس وقت تک کبھی نہ ہوا ہوگا اور اُس وقت تیرے لوگوں میں سے ہر ایک جس کا نام کتاب میں لکھا ہوگا رہائی پائے گا۔‏“‏ (‏دان 12:‏1‏)‏ خدا کے نمائندے یسوع مسیح کی اِسی کارروائی کا ذکر مکاشفہ 19:‏11-‏21 میں بھی کِیا گیا ہے۔‏

اب سوال یہ ہے کہ مکاشفہ 20:‏8 میں جس ”‏جوؔج‌وماجوؔج“‏ کا ذکر کِیا گیا ہے،‏ وہ کون ہے؟‏ مسیح کی ہزار سالہ حکمرانی کے اِختتام پر اِنسانوں کا آخری اِمتحان ہوگا۔‏ اِس کے دوران جو لوگ خدا کے خلاف بغاوت کریں گے،‏ وہ اُن قوموں جیسا نفرت‌انگیز رویہ ظاہر کریں گے جنہوں نے بڑی مصیبت کے آخر پر خدا کے بندوں پر حملہ کِیا ہوگا۔‏ اِن لوگوں کا انجام اُن قوموں کی طرح ہمیشہ کی ہلاکت ہوگا۔‏ (‏مکا 19:‏20،‏ 21؛‏ 20:‏9‏)‏ اِسی لیے ہزار سالہ حکمرانی کے اِختتام پر تمام باغی ”‏جوؔج‌وماجوؔج“‏ کہلائیں گے۔‏

چونکہ ہم خدا کے کلام کی باتوں کے بارے میں تحقیق کرنے کا شوق رکھتے ہیں اِس لیے ہم یہ جاننے کے منتظر ہیں کہ ”‏شاہِ‌شمال“‏ کون ثابت ہوگا۔‏ لیکن خدا کے بندوں پر آخری حملے کے دوران قوموں کی پیشوائی چاہے کوئی بھی کرے،‏ دو باتیں تو یقینی ہیں:‏ (‏1)‏ ماجوج کے جوج اور اُس کی فوجوں کو تباہ کر دیا جائے گا۔‏ (‏2)‏ ہمارا بادشاہ یسوع مسیح،‏ خدا کے بندوں کو بچائے گا اور اُنہیں نئی دُنیا میں لے جائے گا جہاں امن اور سلامتی کا راج ہوگا۔‏—‏مکا 7:‏14-‏17‏۔‏