زبور 37‏:1‏-‏40

  • خدا پر بھروسا کرنے والے برکت پائیں گے

    • ‏”‏بُرے لوگوں کی وجہ سے پریشان نہ ہو“‏ ‏(‏1‏)‏

    • ‏”‏یہوواہ کی وجہ سے بے‌اِنتہا خوشی پاؤ“‏ ‏(‏4‏)‏

    • ‏”‏اپنا ہر کام یہوواہ پر چھوڑ دو“‏ ‏(‏5‏)‏

    • ‏”‏حلیم لوگ زمین کے مالک ہوں گے“‏ ‏(‏11‏)‏

    • نیک شخص کو روٹی کی کمی نہیں ہوگی ‏(‏25‏)‏

    • نیک لوگ زمین پر ہمیشہ زندہ رہیں گے ‏(‏29‏)‏

داؤد کا گیت۔‏ א ‏[‏آلف]‏ 37  بُرے لوگوں کی وجہ سے پریشان نہ ہو*اور گُناہ‌گاروں سے حسد نہ کرو۔‏   وہ گھاس کی طرح بہت جلد مُرجھا جائیں گےاور ہری گھاس کی طرح سُوکھ جائیں گے۔‏ ב ‏[‏بیتھ]‏   یہوواہ پر بھروسا رکھو اور اچھے کام کرو؛‏زمین پر*‏ بسے رہو اور وفاداری سے کام کرو۔‏   یہوواہ کی وجہ سے بے‌اِنتہا خوشی پاؤ*اور وہ تمہارے دل کی مُرادیں پوری کرے گا۔‏ ג ‏[‏گیمل]‏   اپنا ہر کام*‏ یہوواہ پر چھوڑ دو؛‏اُس پر بھروسا رکھو اور وہ تمہاری خاطر کارروائی کرے گا۔‏   وہ تمہاری نیکی کو صبح سویرے کی روشنی کی طرح چمکائے گااور تمہارے اِنصاف کو بھری دوپہر کے سورج کی طرح۔‏ ד ‏[‏دالتھ]‏   خاموشی سے یہوواہ کے منتظر رہو؛‏بے‌تابی*‏ سے اُس کا اِنتظار کرو۔‏ اُن لوگوں کی وجہ سے پریشان نہ ہو جو اپنی سازشوں میں کامیاب ہو جاتے ہیں۔‏ה ‏[‏ہے]‏   غصہ تھوک دو اور قہر سے باز رہو؛‏غصے میں آ کر بُرے کام نہ کرو*   کیونکہ بُرے لوگوں کو ختم کر دیا جائے گا۔‏لیکن یہوواہ سے اُمید لگانے والے زمین کے مالک ہوں گے۔‏ ו ‏[‏واو]‏ 10  بس کچھ ہی دیر کی بات ہے پھر بُرے لوگ نہیں رہیں گے؛‏تُم اُس جگہ کو دیکھو گے جہاں وہ ہوتے تھےمگر وہ وہاں نہیں ہوں گے۔‏ 11  لیکن حلیم لوگ زمین کے مالک ہوں گے؛‏وہ بے‌اِنتہا خوشی پائیں گے کیونکہ ہر طرف امن ہوگا۔‏ ז ‏[‏زین]‏ 12  بُرا شخص نیک شخص کے خلاف سازشیں گھڑتا ہے؛‏وہ اُس پر دانت پیستا ہے۔‏ 13  لیکن یہوواہ اُس پر ہنسے گاکیونکہ وہ جانتا ہے کہ اُس کی ہلاکت کا دن ضرور آئے گا۔‏ ח ‏[‏خیتھ]‏ 14  بُرے لوگ اپنی تلواریں نکالتے ہیں اور اپنی کمانیں تانتے ہیںتاکہ مظلوموں اور غریبوں کو مار ڈالیںاور سیدھی راہ پر چلنے والوں کو ذبح کر دیں۔‏ 15  لیکن اُن کی تلواریں اُن کے اپنے دلوں کو چھید دیں گی؛‏اُن کی کمانیں توڑ دی جائیں گی۔‏ ט ‏[‏طیتھ]‏ 16  نیک شخص کی تھوڑی سی چیزیںبہت سے بُرے لوگوں کی ڈھیر ساری دولت سے بہتر ہیں 17  کیونکہ بُرے لوگوں کے بازو توڑ دیے جائیں گےمگر یہوواہ نیک لوگوں کو سنبھالے گا۔‏ י ‏[‏یود]‏ 18  یہوواہ جانتا ہے کہ بے‌قصور لوگوں کو کیا کچھ سہنا پڑتا ہے؛‏*اُن کی وراثت ہمیشہ تک رہے گی۔‏ 19  اُنہیں مصیبت کے وقت شرمندہ نہیں کِیا جائے گا؛‏قحط کے دوران اُن کے پاس کثرت سے خوراک ہوگی۔‏ כ ‏[‏کاف]‏ 20  لیکن بُرے لوگوں کا نام‌ونشان مٹ جائے گا؛‏یہوواہ کے دُشمن ہری بھری چراگاہوں کی طرح غائب ہو جائیں گے؛‏وہ دُھوئیں کی طرح اُڑ جائیں گے۔‏ ל ‏[‏لامد]‏ 21  بُرا شخص اُدھار لیتا ہے اور واپس نہیں کرتامگر نیک شخص دریادل*‏ ہوتا ہے اور دوسروں کو دیتا ہے۔‏ 22  جن لوگوں کو خدا برکت دیتا ہے، وہ زمین کے مالک ہوں گے؛‏لیکن جن پر وہ لعنت کرتا ہے، اُنہیں ختم کر دیا جائے گا۔‏ מ ‏[‏میم]‏ 23  یہوواہ اُس شخص کے قدموں کی رہنمائی کرتا*‏ ہےجس کی روِش سے وہ خوش ہوتا ہے۔‏ 24  چاہے وہ گِر بھی جائے تو بھی وہ گِرا نہیں رہے گاکیونکہ یہوواہ اپنے ہاتھ سے*‏ اُسے سہارا دے گا۔‏ נ ‏[‏نون]‏ 25  ایک وقت تھا کہ مَیں جوان تھا اور اب مَیں بوڑھا ہو گیا ہوںلیکن مَیں نے کبھی نہیں دیکھا کہ کسی نیک شخص کو تنہا چھوڑ دیا گیا ہویا اُس کے بچے روٹی کے لیے بھیک مانگ رہے ہوں۔‏ 26  وہ ہمیشہ کُھلے دل سے قرض دیتا ہےاور اُس کے بچوں کو برکت ضرور ملے گی۔‏ ס ‏[‏سامک]‏ 27  بُرے کام چھوڑ دو اور اچھے کام کروپھر تُم زمین پر ہمیشہ بسے رہو گے 28  کیونکہ یہوواہ اِنصاف سے محبت کرتا ہےاور وہ اپنے وفادار بندوں کو کبھی ترک نہیں کرے گا۔‏ ע ‏[‏عین]‏ وہ ہمیشہ اُن کی حفاظت کرے گالیکن بُرے لوگوں کی نسل ختم کر دی جائے گی۔‏ 29  نیک لوگ زمین کے مالک ہوں گےاور اِس پر ہمیشہ زندہ رہیں گے۔‏ פ ‏[‏پے]‏ 30  نیک شخص کے مُنہ سے دانش‌بھری باتیں نکلتی ہیں*اور اُس کی زبان سے اِنصاف کی باتیں۔‏ 31  اُس کے خدا کے قوانین اُس کے دل میں بسے ہیں؛‏اُس کے قدم نہیں ڈگمگائیں گے۔‏ צ ‏[‏صادے]‏ 32  بُرا شخص نیک شخص پر نظر رکھتا ہےاور اُسے مار ڈالنے کی تاک میں رہتا ہے۔‏ 33  لیکن یہوواہ نیک شخص کو بُرے شخص کے ہاتھ میں نہیں چھوڑے گااور نہ ہی عدالت کرتے وقت اُسے مُجرم ٹھہرائے گا۔‏ ק ‏[‏قوف]‏ 34  یہوواہ سے اُمید لگاؤ اور اُس کی راہ پر چلوپھر وہ تمہیں سرفراز کرے گا اور زمین کا مالک بنائے گا۔‏ جب بُرے لوگوں کو ختم کِیا جائے گا تو تُم دیکھو گے۔‏ ר ‏[‏ریش]‏ 35  مَیں نے بُرے اور ظالم شخص کو ایسے پھلتے پھولتے دیکھا ہےجیسے ہرا بھرا درخت اپنی مٹی میں پھلتا پھولتا ہے۔‏ 36  لیکن وہ اچانک سے ختم ہو گیا اور مٹ گیا؛‏مَیں اُسے ڈھونڈتا رہا مگر وہ کہیں نہیں ملا۔‏ ש ‏[‏شین]‏ 37  بے‌اِلزام شخص*‏ پر دھیان دو؛‏سیدھی راہ پر چلنے والے اِنسان پر غور کروکیونکہ ایسے شخص کا مستقبل پُرسکون*‏ ہوگا۔‏ 38  لیکن تمام گُناہ‌گاروں کو ہلاک کر دیا جائے گا؛‏بُرے لوگوں کا کوئی مستقبل نہیں ہے۔‏ ת ‏[‏تاو]‏ 39  نیک لوگوں کو نجات یہوواہ کی طرف سے ملتی ہے؛‏مصیبت کے وقت وہ اُن کا قلعہ ہوتا ہے۔‏ 40  یہوواہ اُن کی مدد کرے گا اور اُنہیں چھڑائے گا؛‏ وہ اُنہیں بُرے لوگوں سے بچائے گا اور اُنہیں نجات دِلائے گاکیونکہ وہ اُس کے پاس پناہ لیتے ہیں۔‏

فٹ‌ نوٹس

یا ”‏آگ‌بگولا نہ ہو“‏
یا ”‏ملک میں“‏
یا ”‏یہوواہ میں سب سے زیادہ خوشی ڈھونڈو“‏
یا ”‏اپنی راہ“‏
یا ”‏صبر“‏
یا شاید ”‏غصہ نہ کرو کیونکہ اِس سے صرف نقصان ہی ہوتا ہے“‏
عبرانی میں:‏ ”‏یہوواہ بے‌اِلزام لوگوں کے دنوں کو جانتا ہے؛“‏
یا ”‏مہربان“‏
یا ”‏کے قدم جماتا“‏
یا ”‏اُس کا ہاتھ پکڑ کر“‏
یا ”‏نیک شخص دھیمی آواز میں دانش‌بھری باتیں کرتا ہے“‏
یا ”‏خدا کے وفادار رہنے والے شخص“‏
یا ”‏پُرامن“‏